منگل, 19 جنوری 2021

 

ایمزٹی وی(اسلام آباد)آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ پاک فوج سرحد پار سے ہر طرح کے خطرات سے اچھی طرح نمٹنا جانتی ہے۔
ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے وزیراعظم آزاد کشمیر نے ملاقات کی جس دوران کنٹرول لائن پر سیکیورٹی کی صورتحال اور باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔
 
اس موقع پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ پاک فوج سرحد پار سے ہر طرح کے خطرات سے اچھی طرح نمٹنا جانتی ہے۔
 
ڈی جی آئی ایس پی آر کے مطابق وزیراعظم آزاد کشمیر نے سیکیورٹی اور ترقیاتی کاموں میں تعاون پر آرمی چیف کا شکریہ بھی ادا کیا۔

 

ایمز ٹی وی (پنجاب) لاہور ہائیکورٹ بار ایسو سی ایشن کے صدر رانا ضیاء عبد الرحمن نے سابق صدر سپریم کورٹ بار حامد خان ، ہائیکورٹ بار کے سابق صدور شفقت محمود چوہان ، احمد اویس اور دیگر کے ہمراہ کراچی شہداء ہال میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ فوجی عدالتوں کا قیام ماورائے آئین اقدام ہے ۔پارلیمنٹ موجود سیاسی جماعتوں کو اپنے حلف کی پاسداری کرتے ہوئے فوجی عدالتوں کی تو سیع کے فیصلے کی مخالفت کرنی چاہیے ۔ انہوں نے کہا کہ اس تناظر میں وکلاء تنظیموں کا کنونشن بلایا جائے گا اور متفقہ لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ موجودہ آئینی عدالتوں کو طاقت دی جائے اور انہیں مضبوط کیا جائے۔ اس موقع پر وکلاء رہنماؤں کا کہنا تھاکہ وکلاء نے شروع دن ہی فوجی عدالتوں کو تسلیم نہیں کیا اور اسکے خلاف سپریم کورٹ سے رجوع کیا تھا اورسپریم کورٹ نے بھی ایک خاص مدت تک اجازت دی تھی جو دو سال گزر جانے کے بعد ختم ہو چکی ہے۔

 

 

ایمز ٹی وی (پنجاب) پنجاب حکومت نے پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کو ریلی کی اجازت دینے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت نے بلاول بھٹو زرداری کو ریلی کی اجازت دینے کا فیصلہ کرتے ہوئے لاہور شیخوپورہ اور شاہ کوٹ انتظامیہ کو ہدایات جاری کر دی ہیں۔ پنجاب کے وزیر قانون رانا ثناءاللہ کا کہنا ہے کہ بلاول بھٹو کی ریلی کو سیکیورٹی فرہم کی جائے گی گی اور امید ہے کہ بلاول سیاسی رواداری اور شائستگی کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑیں گے۔

 

 

ایمزٹی وی(اسلام آباد)تحریک انصاف کے چیئر مین عمران خان نے کہا ہے کہ نواز شریف ڈیوس میں اینٹی کرپشن پر لیکچر دینے گئے ہیں تو پھر الطاف حسین کو بھی دہشت گردی پر لیکچر دینے کے لیے دعوت نامہ بھیجا جانا چاہیے ۔ان کا کہنا ہے کہ آج عدالتی کارروائی میں شریف خاندان کی ایک اور اسٹیل مل سامنے آگئی ہے ،یہ سب منی لانڈرنگ سے بنائے گئے پیسے ہیں ۔
 
اسلام آباد میں پانا ما لیکس کیس کی سماعت کے بعد میڈ یا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جو تلاشی سپریم کورٹ میں شروع ہوئی ہے ،یہ قوم کی جیت ہے ۔انہوں نے کہا کہ آج نواز شریف کے وکیل نے عدالت کو
بتا یا کہ حسین نواز نے چار سالوں کے دوران نواز شریف کو 52کروڑ روپے بھیجے ۔
 
ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف تیس کروڑکی گھڑی پہنتا ہے اور بیٹے سے 52کروڑ روپے منگواتا ہے ،یہ سارے پیسے منی لانڈرنگ کے ذریعے باہر بھیجے گئے تھے ،وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے منی لانڈرنگ کا اعتراف کیا ہے اور سارے ثبوت ایف آئی اے کے پاس موجود ہیں ۔عمران خان نے کہا کہ آج نواز شریف کے وکیل کے منہ سے نکل گیا کہ ایک اور اسٹیل مل ہے ،گلف اسٹیل سے نقصان ہوا لیکن یہ نقصان والی ملز انڈے دیتی جا رہی ہے ،در حقیقت یہ سارا پیسہ منی لانڈرنگ کرکے باہر بھیجا گیا ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں کرپشن پر قابو نہ پایا گیا تو ملک مزید مقروض ہو جائے گا ،کسی ملک کی فارن پالیسی تب ہوتی ہے جب ملک اپنے پیروں پر کھڑا ہو۔

 

 

ایمز ٹی وی(کراچی) زمین کا درجہ حرارت بڑھ رہا ہے، زمین کا درجہ حرارت چار ڈگری سینٹی گریڈ اور بڑھ گیا تو دنیا کے بڑے شہروں کا بیشتر حصہ زیرآب آجائے گا۔ کراچی کے اولڈ سٹی ایریا بھی ڈوبیں گے۔ جس طرح پانی ابل کر منہ کو آتا ہے، ویسے ہی زمین کا درجہ حرارت بڑھے تو سمندر پھیلتا ہے۔ ماہرین ماحولیات بتاتے ہیں کہ پانی کا پارہ چڑھ جائے تو بہت سوں کے روزگار کا ذریعہ پیر وں تلے زمین بھی چھین لیتا ہے۔ تحقیق بتاتی ہے کہ یہ کرہ ارض، چار ڈگری سینٹی گریڈ مزید گرم ہوجائے تو سرپھراسمندر ساٹھ کروڑ آبادی کے زیراستعمال رقبے کو متاثر کرے گا۔ سائنسدان اس تبدیلی کی توقع آئندہ سو سال تک کررہے ہیں۔ ماہرماحولیات ڈاکٹر معظم کا کہنا ہے کہ سڈنی، نیویارک، شنگھائی اور ممبئی سمیت درجہ حرارت میں اضافہ جہاں دنیا کے دیگر بڑے شہروں کو متاثر کرے گا وہیں سمندر کنارےآباد کراچی بھی اس سے بچ نہیں پائے گا۔ ماہرین کا اندازہ ہے کہ کراچی کے قدموں کو چھوتا سمندر بپھرا تو پرانا شہر بہالے جائے گا۔ تحقیق نے مستقبل میں خطرے کی گھنٹی بجادی، اب حال میں کیے گئے اقدامات ہی تبدیلیوں کا رخ بدل سکتے ہیں۔

 

 

ایمز ٹی وی(صحت)موسم سرما میں مولی گو کہ لوگ اسے سلاد بنانے کے دوران استعمال کرتے ہیں لیکن اس کے انتہائی حیرت انگیز طبی فوائد ہے شاید جن سے ہم اب تک لا علم تھے لیکن ہم آپ کو ان کے فوائد بتارہے ہیں ۔ 1۔ مولی میں فاسفورس ، کیلشیم اور وٹامن سی کے ساتھ فولاد کی بھی کافی مقدار پائی جاتی ہے۔ 2۔ مولی پتھری کے مرض کے لئے ایک مفید سبزی ہے اس کے کھانے سے پتھری کے مرض میں مبتلا مریضوں کو افاقہ ہوتا ہے، اس کے روزانہ کھانے سے پتھری گھل کر ریزہ ریزہ ہو کو پیشاب کے ذریعے نکل جاتی ہے۔ 3۔ مولی بواسیر کے مرض میں بھی مبتلا مریضوں کے لئے انتہائی کارآمد سبزی ہے، بواسیر کے مرض میں مبتلا مریض کو اس کا رس روزانہ کی بنیاد پرپلائیں تو اس بیماری سے چھٹکارہ حاصل کیا جاسکتا ہے۔ 4۔یرقان کے مرض میں مبتلا مریضوں کو مولی کے پتوں کا رس نکال کراس میں چینی ملاکر پلائیں توبہت جلد یرقان کا خاتمہ ہو جائے گا۔ 5۔ مولی جگر اورتلی کے مرض میں بھی مبتلا مریضوں کے افاقے کا ایک ذریعہ ہے جب کہ پیشاب کے مرض میں بھی مبتلا مریضوں کے لئے انتہائی مفید ہے۔ 6۔ مولی قبض کشا بھی ہے اور اس کے کھانے سے آنتوں کی حرکتیں تیز ہوجاتی ہیں جو قبض میں مبتلا مریضوں کے لئے افاقے کا سبب بنتی ہے۔

 

 

ایمز ٹی وی(کراچی) میئر کراچی وسیم اختر نے ہدایت کی ہے کہ بلدیہ عظمیٰ کراچی کی گاڑیاں کے ایم سی افسران کے علاوہ جن دیگر افسران کے پاس ہیں وہ ایک ہفتے کے اندر واپس کر دیں۔ کے ایم سی کی گاڑیاں واپس نہ کرنے والے افسران کے خلاف ایف آئی آر سمیت دیگر قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی، یہ بات انہوں نے محکمہ فنانس کی بریفنگ کے دوران کہی اس موقع پر میونسپل کمشنر ڈاکٹر بدر جمیل، مشیر مالیات خالد محمود شیخ اور دیگر افسران بھی موجود تھے، میئر کراچی نے محکمہ فنانس کو ہدایت کی کہ سرکاری گاڑی استعمال کرنے والے افسران کا کنوینس الائونس لازمی طور پرکاٹا جائے اور جن افسران نے کنوینس الائونس نہیں کٹوایا انہیں تادیبی نوٹس جاری کیے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ کی گاڑیاں واپس کرنے کی ہدایت پر سختی سے عملدرآمد کیا جائے اور جو افسران گاڑیاں واپس نہ کریں ان کے خلاف تادیبی کارروائی کی جائے۔

 

 

ایمزٹی وی(اسلام آباد)سپریم کورٹ بار نے دہشتگردی کے خاتمے کیلئے فوجی عدالتوں کی مدت میں توسیع کی حمایت کر دی جبکہ سیکرٹری بار آفتاب باجوہ نے فوجی عدالتوں کی مدت معیاد میں فوری توسیع کی اپیل کی ہے۔
میڈیا ذرائع کے مطابق سیکرٹری سپریم کورٹ بار آفتاب باجوہ کا کہنا ہے کہ دہشت گردی اور کرپشن کے باعث ملک حالت جنگ میں ہے، ایسی صورت حال میں عام کورٹس نہیں بلکہ ملٹری کورٹس ہی کارآمد ہوتی ہیں۔انھوں نے کہا کہ کرپشن اور دہشت گردی کے مکمل خاتمہ تک ملٹری کورٹس کا قیام ناگزیر ہے، جنگ میں آرمی دفاع کرتی ہے تو کورٹس بھی آرمی کی ہی ہونی چاہئے کیونکہ فوجی عدالتوں میں مقدمات کو جلد نمٹا کر کیس کا فوری فیصلہ کیا جا سکتا ہے۔دہشت گردی کی خصوصی عدالتوں میں خوف کے باعث کوئی گواہ پیش نہیں ہوتا ہے۔
 

 

 

ایمز ٹی وی(صحت)اکثر نوجوان لڑکے اور لڑکیاں چہرے کے داغ دھبوں سے پریشان دکھائی دیتے ہیں ۔ تاہم اگر ان مہاسوں اور چھائیوں سے نجات چہاتے ہیں تو تھوڑی سی احتیاط لازم ہے ۔ کیونکہ احتیاط علاج سے بہتر ہے ۔اگر آپ چہر ے کے داغ دھبے اور چھائیاں ختم کرنا چاہتے ہیں تو ان آزمودہ ٹوٹکوں پر عمل کریں ۔ • خوراک میں پروٹین، ہری سبزیاں اور پھل زیادہ سے زیادہ استعمال کریں۔ • باقاعدگی سے ورزش کریں اور کھلی ہوا میں سیر کو جائیں۔ • ہر صورت میں دھوپ سے بچیں بوقت ضرورت سن پروٹیکٹو کریم استعمال کریں۔ • بغیر ڈاکٹری مشورے کے کوئی دوا استعمال نہ کریں۔ • روزانہ لیموں کے رس کو چہرے پر لگائیں اور خشک ہونے نہ دیں۔ منہ ہرگز مت دھوئیں۔ • کدوکش کئے ہوئے مولی کے چار کھانے کے چمچ میں سرکے کے چند قطرے ملا کر لئی سی بنا کر چہرے پر لگائیں۔ • مکھن اور دودھ کی بالائی کا بھی روازنہ استعمال کریں۔ • چہرے پر سرسوں کا ابٹن لگائیں اس کے لیے سرسوں کو باریک مہین پیس کر قدرے پانی کے ساتھ ملا کر آمیزہ بنائیں اور چہرے پر لگائیں۔ دودھ (کھانے کے دو چمچ) پسا ہوا نمک (ایک چمچ) اس کو باہم ملا کر رات کو سوتے وقت چہرے پر خوب اچھی طرح ملیں صبح اٹھ کر ٹھنڈے پانی سے چہرے کو اچھی طرح دھو ڈالیں۔ • بھینس کے دودھ میں بادام کو خوب باریک پیسیں رات کو سوتے وقت پورے چہرے پر ملیں صبح کو ٹھنڈے پانی سے دھوئیں۔

 

 

ایمز ٹی وی(کراچی) سندھ ہائی کورٹ نے سیکیورٹی سے متعلق سابق رکن قومی اسمبلی نبیل گبول کی درخواست کی سماعت ملتوی کر دی ہے ، گزشتہ روز چیف جسٹس سجا دعلی شاہ کی سربراہی میں قائم دورکنی بینچ نے نبیل گبول کی درخواست کی سماعت کی ۔ دوران سماعت نبیل گبول کے وکیل نے دلائل دیے اور سماعت ملتوی کر نے کی استدعا کی جس پر عدالت نے سماعت غیر معینہ مدت کے لیے ملتوی کر دی ،قبل ازیں درخواست گزار نے حکومت سندھ، وزارت داخلہ ، آئی جی سندھ ودیگر کو فریق بناتے ہوئے موقف اختیار کیا ہے کہ وہ متعدد بار لیاری سے رکن اسمبلی منتخب ہو چکے ہیں تاہم ایم کیو ایم سے استعفیٰ دینے کے بعد انھیں مسلسل جان سے مارنے کی دھمکیاں دی جارہی ہیں اورمتعدد بار حملے بھی ہوچکے ہیں۔ جبکہ پیپلز پارٹی کی اعلیٰ قیادت سے اختلافات کے بعد ان سے سیکورٹی واپس لے لی گئی ہے۔جس کے باعث ان کی جان کو خطرہ ہے لہذا عدالت سے استدعا ہے کہ رینجرز کی سیکورٹی فراہم کرنے کے احکامات جاری کیے جائیں۔