اتوار, 14 اگست 2022


اپنی مرضی سے اسلام قبول کیا ہے

ایمزٹی وی(چترال) کیلاش کی 14 سال کی لڑکی رینا کا کہنا ہے اس نے اسلام اپنی مرضی سے قبول کیا اوراس پر اس حوالے سے کوئی دباؤ نہیں تھا۔

چترال پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے اسلام قبول کرنے والی 14 سال کی نویں جماعت کی طالبہ رینا کا کہنا تھا کہ میں نے اپنی مرضی سے اسلام قبول کیا کیونکہ میں تعلیم یافتہ ہوں اور میں نےاسلامی مواد کا مطالعہ کیا جس سے متاثر ہوکر اسلام قبول کرلیا۔ لڑکی نے اس بات کی سختی سے تردید کی کہ اس پر مذہب تبدیل کرنے کے لیے کوئی دباؤ ڈالا گیا۔

واضح رہے کہ خیبر پختونخوا کے ضلع چترال میں بمبوریت کے علاقے میں کیلاش قبیلے کی اس لڑکی کی جانب سے مذہب کی تبدیلی پر علاقے میں تنازع کھڑا ہوگیا تھا تاہم اب لڑکی کی جانب سے بیان دیئے جانے کے بعد یہ مسئلہ حل ہوگیا ہے۔

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment