جمعہ, 04 دسمبر 2020


شکست کے ذمہ دار صرف اور صرف بولرز

 

ایمز ٹی وی(اسپورٹس) ہیڈکوچ مکی آرتھر نے شکستوں کی ذمہ داری بولرز پر ڈال دی، اپنی رپورٹ میں بیٹنگ میں غیر مستقل مزاجی اور ناقص فیلڈنگ کی نشاندہی بھی کردی۔

چیئرمین پی سی بی شہریار خان نے بھی بولرز کوشکست کا ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے کہا کہ وسیم اور وقار جیسے مہلک پیسرز میسر نہیں، نیا ٹیلنٹ تلاش کرنے کی ضرورت ہے، پی ایس ایل کے دوران مہم شروع کرینگے، جولائی، اگست میں تربیتی کیمپ لگاکر صلاحیتیں نکھارنے کیلیے کام کیا جائے گا۔

چیئرمین پی سی بی شہریار خان نے کہا کہ آسٹریلیا میں ٹیسٹ سیریز کے حوالے سے ہیڈ کوچ مکی آرتھر کی رپورٹ موصول ہوچکی جس میں انھوں نے کہا ہے کہ اگرچہ بیٹنگ زیادہ خراب نہیں تھی لیکن کارکردگی میں تسلسل کا فقدان رہا، اظہر علی کے سوا کسی نے مستقل مزاجی کا مظاہرہ نہیں کیا، شکستوں کی سب سے بڑی وجہ بولرز تھے جو توقعات پر پورا اترنے میں ناکام رہے، فیلڈنگ اور کیچنگ بھی معیار کے مطابق نہ رہی۔ شہریار خان نے کہا کہ ایک زمانہ تھا کہ ہمیں وسیم اکرم، وقاریونس اور شعیب اختر جیسے مہلک بولرز کی خدمات میسر تھیں، اب وہ بات نظر نہیں آتی،اب ہمیں نوجوان ٹیلنٹ تلاش کرنے کی ضرورت ہے،محمد عامر کم بیک کے بعد شاید پہلے جیسی فارم میں نہیں لیکن پیسر بدقسمت بھی رہے ہیں کہ ان کی گیندوں پر کئی کیچ ڈراپ ہوئے مکی آرتھر کا خیال ہے کہ عامر اچھی بولنگ کررہے اور بیٹسمین ان کو سنبھل کرکھیلتے ہیں۔

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment